جنہیں پہلے آئی ایم ایف چُڑیل لگتی تھی انہیں آج وہ مس ورلڈ دکھائی دے رہی ہے، ناصر شاہ

این آر او اور احتساب کی بات کرکے وفاقی وزراء دیگر معاملات سے توجہ ہٹانا چاہتے ہیں، ناصر شاہ فوٹو: فائل

این آر او اور احتساب کی بات کرکے وفاقی وزراء دیگر معاملات سے توجہ ہٹانا چاہتے ہیں، ناصر شاہ فوٹو: فائل

 کراچی: سندھ کے وزیر سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ جنہیں ماضی میں آئی ایم ایف چُڑیل لگتی تھی انہیں آج یہی آئی ایم ایف مس ورلڈ دکھائی دے رہی ہے۔

وہ پیر کو سندھ اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کررہے تھے ناصر حسین شاہ کا کہنا تھا کہ ارشاد رانجھانی واقعے کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں، ہم ان کے خاندان کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں رحیم شاہ گرفتار ہوچکا ہے، وزیر اعلی پولیس پر برہم ہوئے ہیں لواحقین کے کہنے پر ایف آئی آر درج کی جائے گی کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔ پیپلزپارٹی یا کسی بھی جماعت کا کوئی ایم این اے یا ایم پی اے ہو اس کیس پر اثرانداز نہیں ہو سکتا انہیں بھی تحقیقات کے دائرہ میں شامل کیاجائیگا وزیراعلیٰ سندھ نے عدالتی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ کسی بھی بااثر کو رعایت نہیں ملے گی۔

ناصر شاہ نے کہا کہ این آر او اور احتساب کی بات کرکے وفاقی وزراء دیگر معاملات سے توجہ ہٹانا چاہتے ہیں، یہ خود خودکشی کی بات کرنے کے بعد آئی ایم ایف کے پاس گئے ہیں، آئی ایم ایف ان کو چڑیل لگتی تھی اب انہیں مس ورلڈ لگ رہی ہے، روپے کی قدر روزانہ گرتی جارہی ہے، ان کے قول و فعل میں تضاد ہے، پی ٹی آئی والے ہر رکن اسمبلی کے لئے ترقیاتی فنڈز کے نام پر ہیسے رکھ رہے ہیں، اب ہمارے ملک اور عوام کا کیا ہوگا، ہم زیادہ بھگتیں گے، سندھ کو 120 ارب روپے سے کم فنڈز دئیے گئے ہیں، گیس نہیں دے رہے ہیں چولہے نہیں جل رہے یہ زیادتی نہیں تو اور کیا ہے؟



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں