گوئٹے مالا کی سابق نائب صدر کو 15 سال قید کی سزا

سابق نائب صدر پر آلودہ جھیلوں کو صاف کرنے کے پروگرام میں غبن کا الزام تھا۔ فوٹو : رائٹرز

سابق نائب صدر پر آلودہ جھیلوں کو صاف کرنے کے پروگرام میں غبن کا الزام تھا۔ فوٹو : رائٹرز

گوئٹے مالا سٹی: گوئٹے مالا کی سابق نائب صدر روکسانہ بلدیٹی کو ’میجک واٹر‘ اسکینڈل میں کرپشن الزامات ثابت ہونے پر 15 سال 6 ماہ قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق  گوئٹے مالا کی عدالت میں میجک واٹر اسکینڈل کی سماعت ہوئی۔ فریقین کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے سابق نائب صدر روکسانہ بلدیٹی، اُن کے بھائی اور دیگر 8 افراد کو کرپشن الزامات میں مجرم قرار دیتے ہوئے 15 سال 6 ماہ قید کی سزا سنا دی۔

گوئٹے مالا کی 56 سالہ سابق نائب صدر روکسانہ بلدیٹی پر جھیلوں کو صاف کرنے کے لیے قائم ریاستی فنڈ میں سے کروڑوں ڈالرغبن کا الزام تھا۔ آلودہ جھیلوں کو صاف کرنے کا ٹھیکا اسرائیل کی انجینیئرنگ کمپنی کو دیا گیا تھا تاہم فنڈ میں سے کروڑوں ڈالر ایک اور کمپنی اور چند افراد کے اکاؤنٹ میں منتقل کیے گئے۔

آلودہ جھیلوں کو صاف کرنے لیے جس کیمیکل کو نہایت خاص اور کارگر بنا کر پیش کیا گیا تھا جب اس کیمیکل کا لیب میں معائنہ کیا گیا تو یہ صرف پانی، نمک اور کلورین کی کچھ مقدار کا ملغوبہ نکلا جس سے جھیل کے آلودہ پانی کو صاف نہیں کیا جا سکتا بلکہ یہ مزید آلودگی کا باعث بنتا۔

واضح رہے کہ روکسانہ بلدیٹی نے 2012 میں نائب صدر کا عہدہ سنبھالا تھا تاہم کرپشن الزامات سامنے آنے پر شدید عوامی دباؤ کے باعث انہیں 2015 میں مستعفی ہونا پڑا تھا۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں